0

اہداف پورے ہونے پر یہ آئی ایم ایف پروگرام آخری ہوسکتا ہے۔ وزیراعظم میاں شہباز شریف

اسلام آباد (نیوز لیکس)وزیراعظم شہباز شریف نے کہا ہے کہ ملک میں سرمایہ کاری کے فروغ کے لیے سازگار ماحول بنایا اور اگر ہم نے اپنے پروگرام پر سختی سے عمل کیا اور اہداف پر پوری طرح کمر کس لی تو میں وعدہ کرتا ہوں کہ عالمی مالیاتی ادارہ (آئی ایم ایف) سے جو قرض لینے جارہے ہیں وہ آخری پروگرام ہوگا۔

وزیراعظم شہباز شریف نے اپنی حکومت کے 100 دن مکمل ہونے پر اپنی کارکردگی کے حوالے سے قوم سے خطاب کیا اور خطاب کے دوران انہوں نے کہا کہ میں دنیا میں جہاں جاتا ہوں تو ان سے پہلی بات یہ کرتا ہوں کہ آپ کے ملک قرضے لینے نہیں بلکہ سرمایہ کاری لینے آیا ہوں اور اس کے لیے جتنے لوازمات ہیں، اس کے لیے ہم نے بھرپور تیاری کی ہے، آئندہ سرمایہ کاری اور تجارت کی بنیاد پر ہمارے تعلقات بڑھیں گے اور میں سمجھتا ہوں پاکستان آہستہ آہستہ قرضوں سے نجات حاصل کرے گا، یہ مشکل ہے لیکن ناممکن نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ دنیا میں ایسی مثالیں ہیں جہاں پر ان ممالک نے صرف ایک دفعہ آئی ایم ایف کے آگے ہاتھ بڑھایا اور پھر ان کے پاس نہیں گئے لیکن ہم 24 سے 25 مرتبہ جاچکے ہیں۔

وزیراعظم شہباز شریف نے کہا کہ میں آج آپ سے وعدہ کر رہا ہوں کہ اگر ہم سختی سے اپنے پروگرام پر عمل پیرا ہوئے اور ہم نے جو اہداف مقرر کیے ہیں، ان پر پوری طورح کمرکس لی تو، جس طرح نواز شریف نے 2017 میں آئی ایم ایف کو خیرباد کہہ دیا تھا، ان شااللہ اب جو پروگرام لینے جا رہے ہیں وہ ہمارا آخری آئی ایم ایف کا پروگرام ہوگا، اس کے بعد ہم اپنے پاؤں پر کھڑے ہوں گے اور ترقی کی دوڑ میں اپنے ہمسایہ ممالک کو پیچھے چھوڑیں گے۔

ان کا کہنا تھا یہ بات کوئی جذباتی نہیں ہے یا عوام کو متاثر کرنے کے لیے نہیں کر رہا ہوں بلکہ پہلے اپنے آپ سے مخاطب ہوں اور پھر اپنے بزرگوں، بھائیوں اور بہنوں سے ملتمس ہوں کہ آئیں اس دوڑ میں ہم شریک ہوں اور ان ممالک کو پیچھے چھوڑ جائیں جو ہم سے پیچھے تھے لیکن اب آگے نکل گئے ہیں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں